ایران کے دہشت گرد پاکستان میں

جیسا کہ سب کو یہ بات معلوم ہے کہ اس دنیا میں مملکت پاکستان کے دشمن بہت ہیں۔ کسی سے اس ملک کا اسلامی ہونا ہضم نہیں ہو رہا تو کسی سے اسکا آئٹمی قوت ہونا ہضم نہیں ہورہا ہے۔

بعض قوتیں بالکل اسکے وجود کو برداشت نہیں کر پارہی، اسکو پاکستان کا مسلم سٹیٹ بننا ہضم نہیں ہورہا ہے، اور اول روز سے اسکی یہی کوشش ہے کہ جس طرح خمینی نے اسلامی انقلاب کے نام سے دھوکہ دے کر ایرانی مسلمانوں کا بیڑا غرق کردیا ، اور ایران کو خالص شیعہ ابن سبائی سٹیٹ بنا دیا تو اسی طرح کی کوشش پاکستان میں کرنے لگے کہ پاکستان کو ایران کی کالونی بنا کر ال یہود کے تابع کیا جائے ۔

لیکن جیسا کہ سب کو معلوم ہے کہ پاکستان کا بننا بھی ایک معجزہ ہے اور بے شمار دربحرانوں سے بچ کر اسکا وجود بھی ایک الگ معجزہ ہے۔

چنانچہ جب پاکستان کے خدام علماء کرام نے ان ایرانی منصوبوں کو بے نقاب کردیا تو جناب اب ایرانی ان علماء کا دشمن بن گیا اور ایرانی ایجنسی نے اپنا کام دکھانا شروع کردیا۔

اسی طرح کراچی میں امریکی اور بھارتی لابی کے ساتھ ساتھ ایران نے بھی اس شہر کی تباہی میں بھرپور حصہ لینا شروع کیا اپنے چھ دہشت گرد گروپ کراچی میں داخل کرکے وہاں دل کھول کر بدامنی پھیلانی شروع کردی ۔

اس میں ان نام نہاد پاکستانیوں نے دل کھول کر ایران کی مدد کی جو کھاتے تو پاکستان سے ہیں لیکن انکی ساری دلی ہمدردیاں ابن سبائی سٹیٹ ایران کے ساتھ ہیں۔ اور ایران کے سبائی سٹیٹ کی بقاء کیلئے پاکستان کی تباہی سے بھی دریغ نہیں کرتے۔

اور انہیں لوگوں کے سبب ہمیشہ امت مسلمہ زوال میں رہی ہیں، چاہے وہ میر جعفر ہوں یا میر صادق یا ابن سباء کی دیگر روحانی اولادیں جو کہ در حقیقت امت مسلمہ سے زیادہ ملت کفریہ کے وفادار ہوتے ہیں۔۔جسکی رپورٹ آپ ذیل میں ملاحظہ کریں ۔شکریہ

About Mansoor Mukarram

منصور مکرم(المعروف درویش خُراسانی) ایک اردو بلاگر ہے۔2011 سے اردو بلاگنگ کرتا ہے۔آجکل بیاضِ منصور کے عنوان کے تحت لکھتا ہے۔

Posted on May 4, 2011, in درویش کے قلم سے, عمومی. Bookmark the permalink. 12 Comments.

  1. کافی معلوماتی تحریر ہے. پاکستان میں بہت سارے لوگ اس نفرت سے آگاہ نہیں ہیں جو ایرانیوں کے دل میں پاکستان کے لئے ہے اسی نفرت میں اس نے شمالی اتحاد کا ساتھ دیا.پاکستان نے ہر مشکل گھڑی میں ایران کا ساتھ دیا حتی کے نیوکلیر ٹیکنالوجی تک دی مگر اس کا بدلہ انہوں نے اقوام متحدہ کے تفتیش کاروں کو اس جوہری تعاون کے سارے ثبوت دے کر دیا. انہوں نے بھارت کی طرف ہاتھ بڑھایا ہے اور مضبوط سیاسی ، معاشی اور تزویراتی روابط قائم کے.زاہدان میں قائم بھارتی قونصل خانہ جس کے بارے میں گمان کیا جاتا ہے کہ بلوچستان میں علحیدگی کی تحریک کو ہوا دینے میں بنیادی نوعیت کا کردار ادا کر رہا ہے. سرحدی خلاف ورزیاں اور سفارتی آداب کی خلاف ورزی کرتے ہوے زہریلے بیانات ایک معمول ہیں.فلسطین کی حمایت اور اسرائیل کے خلاف نعرے محض ایک دکھاوا ہے. ایران کا مقصد ایک علاقائی سپر پاور بننے سے زیادہ کچھ نہیں ہے اور اسی بات کی انھیں تکلیف ہے کہ اسرائیل کے ہوتے ہوے وہ سپر پاور نہیں بن سکتے.بہت سے مبصر یہ بات کہتے ہیں کہ اگر امریکا آج اسرائیل کی پشت پناہی ختم کر کے ایران کی پشت پناہی شروع کر دے تو ایران آج سے ہی اپنی اسرائیل سے نفرت ختم کر سکتا ہے. حقیقت یہ ہے کہ اسرائیل ، امریکا اور ایران میں پس پردہ عمدہ تعلقات قائم ہیں. جس کا بھانڈا ٹریتا پارسی نے اپنی کتاب ” treacherous alliance ” میں پھوڑا ہے.
    سنی علما سے ایران کی دشمنی ایک مسلمہ حقیقت ہے . پاکستان میں ایران کی مداخلت ایک سنگین مسئلہ ہے مگر پاکستان کی شیعہ اشرفیہ اس معاملے کو سفارتی سطع پر اٹھانے کے لئے تیار نہیں.

  2. اگر یہی باتیں پبلک میں کی جائیں تو طعنہ دیا جاتا ہے کہ یہ بندہ “اتحاد بین المسلمین” کے خلاف ہے! باتیں کڑوی ہیں مگر سچ یہی ہے شیعہ لوگ کبھی مسلمانوں کے دوست ہو ہی نہیں سکتے!

    • افسوس تو اس بات پر ہوتا ہے کہ بہت سے لوگ جو اپنےآپ کو دانشور بھی کہتے ہیں ، اس حقیقت سے انکار کرتے ہیں۔ اور کافروں کو مسلمانوں کا بھائی قرار دیتے ہیں۔

      آپکی تشریف آوری کا بہت شکریہ

  3. لیکن میرے جیسے عام لوگ تو ایران کو اپنا خیر خواہ مانتے ہیں

    • عدنان صاحب: تشریف لانے کا بہت شکریہ

      دراصل عام آدمی نے ایران کے بارے میں گہری نظر سے مطالعہ نہیں کیا ہوتا ہے ۔ اسلئے وہ اسکو خیر خواہ مانتے ہیں۔

      عوام تو کیا بہت بڑے بڑے پروفیسر صاحبان اور سکالرز اس معاملے میں بے خبر تھے لیکن جب انہوں نے تحقیق کی تو دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوا۔

      اگرآپکو یہ مضمون برا لگا ہے تو ہم معذرت کرتے ہیں ،لیکن حقیقت وہی ہے جو کہ لکھا گیا ہے۔

  4. معلوماتی تحریر ہے۔
    میں نے جدہ ائیر پورٹ پر ایرانی پوٹرز کو حجاب والی خواتین کو چلتےچلتے ہراساں کرتے دیکھا ہے۔
    جب اس کے متعلق وہاں کھڑے پولیس والے سے شکایت کی تو اس کا کہنا تھا۔کہ ہمیں معلوم ہے۔
    یہ سب ایرانی بغض میں کرتے ہیں۔

    • خواہ مخواہ صاحب ۔بلاگ میں خوش آمدید

      بالکل اسی طرح کی بات مجھے بھی ایک ساتھ نے بتائی جو کہ پچھلے سال حج پر گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ جب ہم رات کو جدہ پہنچ گئے تو ایرانیوں کا ایک گروپ ایک جانب بیٹھا تھا۔ اور وہ ہمارے پیچے آوازیں نکال رہا تھا اور ہمارے پیچھے باتیں کس رہے تھے۔

  5. No doubt Iran could involve in all these issues,but in such vital condition of Muslims we should avoid all inner conflicts, Presently US,Israel & India are the main challenges to compete rather then to fight among
    Otherwise we will face the same worst situation of Muslims like after IRAQ_IRAN war
    In which both sides only Muslims had faced the remarkable loss
    . we shouldn’t be the pray of their DIVIDE & RULE policy

  6. کافر کافر شیعہ کائینات کا بدترین کافر ہے اور واجب القتل ہے

  1. Pingback: ایران کے دہشت گرد پاکستان میں | Tea Break

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: