میرے معمولات

جو پستی کی جانب اترتا ہوں میں

بیاں تیری تسبیح کرتا ہوں میں

                    بلندی  پہ جس وقت چڑھتا ہوں میں

                    تو اللہ اکبر ہی پڑھتاہوں میں

تو الحمدللہ کا رہتا ہے ورد

 جو ہموار راہوں پہ چلتا ہوں میں

                    تعجب کی جب بھی کوئی بات ہو

                     تو حیرت سے تسبیح پڑھتا ہوں میں

خطاء جب بھی ہوجائے سرزد کوئی

 تو استغفراللہ پڑھتا ہوں میں

                    تو کلمہ چہارم کا کرتا ہوں ورد
کہ بازار سے جب گذرتا ہوں میں

کسی کام کا جب بھی اغاز ہو

اسے تسمیہ ہی سے کرتا ہوں میں

                      مظاہر جو قدرت کے دیکھو ں اثر
تو تسبیح و تہلیل پڑھتا ہوں میں

                                                                                          (اثر جونپوری)

About Mansoor Mukarram

منصور مکرم(المعروف درویش خُراسانی) ایک اردو بلاگر ہے۔2011 سے اردو بلاگنگ کرتا ہے۔آجکل بیاضِ منصور کے عنوان کے تحت لکھتا ہے۔

Posted on November 2, 2011, in گل دستہ (کاپی پیسٹ), اشعار. Bookmark the permalink. 3 Comments.

  1. کاش کہ میرا بھی یہی معمول بن جائے ۔ آمین

    جزاک اللہ

  1. Pingback: میرے معمولات | Tea Break

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: