Blog Archives

خوش قسمتی یا عقل مندی

کہتے ہیں کہ ملا نصیر الدین اپنے کھیت گئے تھے جانوروں کیلئے چارہ کاٹنے کیلئے ، واپسی پر گدھے پر کچھ اس طرح سے سوار ہو کر آرہے تھے کہ  خود گدھے کے اوپر بیٹھے ہوئے تھے لیکن چارے کی بوری اپنے سر کے اوپر رکھی ہوئی تھی۔imagesnas 2

راستے میں ایک دانا سے ملاقات ہوئی جو کہ کسی کام کے سلسلے میں گاؤں سے باہر پیدل جا رہے تھے۔

دانا نے پوچھا کہ ملا صاحب کہاں سے آرہے ہو؟

ملا صاحب نے بتایا کہ کھیت سے جانوروں کیلئے چارہ کاٹ کر گھر جا رہا ہوں۔ دانا نے پوچھا کہ ملا صاحب یہ چارے کی بوری اپنے سر کے اوپر کیوں رکھی ہے؟ Read the rest of this entry

Advertisements

پائلٹ کا جواب

گزشتہ کالم میں پاکستانی فوج کے چند قاتلوں کا تذکرہ کیا گیا تھا۔ جن کے مجرمانہ کرتوتوں کے سبب شمالی وزیرستان کے تحصیل میر علی میں ہیلی کاپٹر سےبلاوجہ شیلنگ کے دوران تین چار گاؤوں میں بے گناہ معصوم بچے ،عورتیں اور وطن کے با وفاء لوگ شھید ہوئے تھے۔11-19-2012_76185_l

اس کالم کے لکھنے پر اور انداز تخاطب پر بعض لوگ چیں بچیں ہوئے ،اور کئی ایک نے تو اخلاقیات کے حدود پار کرتے ہوئے منافقین کی علامات کا اظہار کیا۔ اور اس کالم کو خالصتا ملک سے غداری اور بے وفائی قرار دیا گیا۔ Read the rest of this entry

%d bloggers like this: