Blog Archives

چھوٹی چھوٹی

عرصہ قبل ایک اردو فورم پر ایک بندے کی تحریر پڑھی تھی۔جس میں اس بندے نے پاکستانی قوم کے نیکیوں کا مزاق کچھ اس انداز سے اُڑایا تھا کہ پاکستانی عوام کی اکثریت جو نیکی کرتی ہیں ،تو ان میں سے چند یہ نمایاں ہیں۔

بھائی موٹر سائیکل کا سٹینڈ اُٹھالو

بہن اپنی چادر سنبھالو،موٹر سائیکل کے پہئے میں پھنس سکتی ہے وغیرہ

چنانچہ اسی طرح کی بعض باتوں کو جمع کرکے شائد  یہ تاثر دیا گیا تھا کہ پاکستانی قوم یہ خدمت کرکےگویا اسکو بڑی نیکی سمجھتی ہے۔

عموما یہ ہوتا ہے کہ جب بھی کوئی آپ کے کسی کام پر طنز کرئے تو وہ طنزیہ انداز بندے کے ذہن میں گُھس کر بیٹھ جاتا ہے۔اور وقتا فوقتا آپ کے دماغ میں وہ بات گھوم گھوم کر آنے لگتی ہے۔

کچھ یہی حال میرا بھی تھا،کہ اس بندے کی بات جب سے میں نے پڑھی تھی،تو بس میرے دماغ میں گھس کر بیٹھ گئی تھی۔اور جب بھی میں کسی موٹر سائیکل سوار کو دیکھتا یا کسی سواری پر بیٹھی عورت پر نظر پڑتی تو بس وہ جملہ میرے  ذہن میں گھوم جاتا۔اور میں سوچھنے لگتا کہ اس بندے نے یہ کیا کہہ دیا۔

میری بقیہ تحریر پڑھنے کیلئے یہاں کلک کیجئے شکریہ

Advertisements
%d bloggers like this: